129

جاپان کی 200 سالہ تاریخ میں پہلی مرتبہ بادشاہ تخت سے دستبردار

ٹوکیو: جاپان کی 200 سالہ تاریخ میں پہلی مرتبہ ملک کے بادشاہ ایکی ہیٹو اپنی زندگی میں بادشاہت سے دستبردار ہو کر تخت اپنے بیٹے شہزادہ نورو ہیٹو کو منتقل کر دیا ہے- 85 برس کے بادشاہ نے صحت کے مسائل کےباعث بادشاہت سے دستبردارہوئے اور تخت 59 برس کے بیٹے شہزادہ نوروہیٹو کے سپرد کیا – اپنے خطاب میں ایکی ہیٹو نے نئے بادشاہ کے لیے نیک تمناوُں کا اظہار کیا اور کہا کہ وہ قوم کے شکر گزار ہیں جس نے ہر موقع پر ان کا ساتھ دیا اور ان پر اعتماد کیا ، وہ دعا گو ہیں کہ نئے بادشاہ کے دور میں جاپان مزید خوشحال اور ترقی یافتہ ہوگا- خاندان میں صرف 18 افراد باقی رہ گئے ہیں اور اولاد نرینہ نہ ہونے کی وجہ سے شاہی خاندان کو نسل آگے بڑھانے میں مشکلات کا سامنا ہے کیونکہ قانوناّ شاہی خاندان سے تعلق رکھنے کے باوجود کوئی خاتون تخت کی وارث نہیں بن سکتی- نئے بادشاہ نوروہیٹو کی صرف ایک بیٹی ہے اور یہی وجہ ہے کہ مستقبل میں بادشاہ کے عہدے کے حوالے سے قانون میں تبدیلی یا ترمیم پر بحث جاری ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں